Tuesday, November 20, 2018
Home > قومی > اگر قوم کے پیسے واپس نہ لا سکے تو کرسی پر بیٹھنے کا کوئی حق نہیں ہے۔چیف جسٹس

اگر قوم کے پیسے واپس نہ لا سکے تو کرسی پر بیٹھنے کا کوئی حق نہیں ہے۔چیف جسٹس

چیف جسٹس

اگر قوم کے پیسے واپس نہ لا سکے تو کرسی پر بیٹھنے کا کوئی حق نہیں ہے۔چیف جسٹس

نیوز ڈیسک (آواز پوائنٹ):سپریم کورٹ میں دو سو بائیس افراد قر ضہ معافی کیس کی سماعت ہوئی اور اس موقع پر چیف جسٹس کا قرضہ معاف کروانے افراد کے وکلاءسے مکالمہ ہوا۔
تفصیلات کے مطابق دوران سماعت چیف جسٹس نے ریمارکس دیئے کہ ہم نے قوم کے پیسے واپس لانے ہیں خود کمائی مقصد نہیں ہے،قرض معاف کرانے والے پچیس فیصد پرنسپل رقم ادا کریں،آفر قبول نہ کرنے والوں کے مقدمات بینکنگ کورٹس بجھوا دیں گے۔

جسٹس ثاقب نثار نے مزید ریمارکس دیئے کہ ہم پچیس فیصد قرض معافی کی رقم سپریم کورٹ کا اکاؤنٹ کھول کر تین ماہ میں جمع کرانے کا حکم دیں گے، قرض معاف والی رقوم صوابدیدی فنڈز میں نہیں جانیں دیں گے۔

چیف جسٹس نے کیس کی سماعت کل تک ملتوی کرتے ہوئے ریمارکس دیئے کہ بینکنگ کورٹس کو چھ ہفتوں میں مقدمات کا فیصلہ کرنے کی ہدایت دیں گے ،بینکنگ کورٹس خود جائزہ لیں گی، یہ بھی ممکن ہے کہ ہم خود کوئی مارک اپ طے کریں جبکہ تمام فریقین کو ایک موقع فراہم کرتے ہیں جبکہ بینکنگ کورٹس کو چھ ہفتوں میں مقدمات کا فیصلہ کرنے کی ہدایت دیں

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *